حضرت عثمانی صاحب اور ان کے ساتھیوں کی ضمانت خارج

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

دہلی: 19 نومبر، ہماری آواز
السلام علیکم و رحمۃ اللہ
جیسا کہ آپ سب کو معلوم ہے کہ تحریک فروغ اسلام کے بانی و قومی صدر حضرت قمر غنی عثمانی صاحب اور آپ کے تین ساتھیوں کو پانی ساگر پولیس (تریپورہ) تحفظ دینے کے نام پر پولیس اسٹیشن لے گئی اور پھر جھوٹے الزامات لگا کر سنگین دفعات کے تحت جیل بھیج دیا۔

آج 18 نومبر کو 14 دنوں بعد اسیران تحفظ ناموس رسالت ﷺ کی جب مجسٹر یٹ کورٹ میں پیشی ہوئی تو پولیس کورٹ میں کچھ بھی ثابت نہ کرپائی لیکن تعصب کی بنیاد پر یہ کہکر ضمانت خارج کروادی گئی کہ ہمارے پاس کچھ تنظیموں کے لوگ آئے تھے اور یہ کہا کی یہ سب بااثر لوگ ہیں اگر یہ باہر جائیں گے تو ماحول خراب ہونے کا خدشہ ہے اس لئے انھیں ابھی ضمانت نہ دی جائے اور مجسٹریٹ نے اسی بنیاد پر ضمانت خارج کردی۔

عزیز احباب یہ کس قدر ظلم ہے کہ بے گناہ لوگ پہلے ہی اپنے 14 دن انکوائری کے نام پر جیل میں گزار چکے ہیں اب مزید ان کی بے گناہی ثابت ہونے کے باوجود انہیں کورٹ کے چکر لگانے پڑیں گے اور جیل میں وقت گزارنا پڑے گا ، یہ ظلم بالائے ظلم ہے اس لئے ہندوستان کی تمام سنی صحیح العقیدہ جماعتوں سے گذارش ہیکہ وہ اس ظلم کے خلاف آواز اٹھائیں ۔
یاد رکھیں یہ ہندوستانی دستور اور عام شہریوں کے حقوق کے ساتھ کھلے عام کھلواڑ ہے ، امن و امان بنا کے رکھنا حکومت کا کام ہے انتظامیہ کا کام ہے ، یہ کہاں کا انصاف ہیکہ ایک شخص کے جذبات کو بری طرح مجروح کیا جائے اس کے بعد اسی کو یہ کہکر جیل میں ڈال دیا جائے کہ آپ کے باہر جانے سے ماحول خراب ہونے کا اندیشہ ہے
لہذا اب عاشقان مصطفٰی باہر آئیں اور حکومت سے مطالبہ کریں کہ وہ مجرمین کو جیل میں ڈالے اور بے گناہوں کو باعزت رہا کرے ۔

عامر عارفین رضوی
جنرل سیکریٹری
تحریک فروغ اسلام الہند
9910647178

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

About ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

Check Also

راجیہ سبھا الیکشن: عمران پرتاپ گڑھی کو ٹکٹ ملنے سے سینئر کانگریس لیڈر نغمہ ناراض،پون کھیڑا بھی مایوس

نئی دہلی:(ابوشحمہ انصاری)بی جے پی اور کانگریس نے راجیہ سبھا انتخابات کے لیے اپنے امیدواروں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔