گیت

ساون گیت: بیت رہی برسات

ازقلم: شیبا کوثر، آرہ،بہار

رین اندھیری ساون کی رت
چھائی گھٹا گھنگھور
بادل گرجے بجلی چمکے
دھک دھک ہو من مور
کیسے بتا ؤں من کی بات
بیت رہی برسات
ٹھنڈی ٹھنڈی ہوا کے جھو نکے
من مورا لہرا ئے
کوئل کی درد ہلی صدا ئیں
ہوک سی چبھ چبھ جائے
کیسے بتاؤ ں من کی بات
بیت رہی برسات
بنا ساجن یہ ساون جھو لا
من مورا تھر آئے
گیت سکھی میں کیسے گاؤں
ہائے جیا كلپائے
کیسے بتاؤں من کی بات
بیت رہی برسات ۔۔۔۔۔۔!!

ہما اکبر آفرین

محترمہ ہما اکبر آفرین صاحبہ گورکھ پور(یو۔پی۔) کے قدیم ترین قصبہ گولا بازار سے تعلق رکھنے والی بہترین قلم کار ہیں۔ فی الحال موصوفہ ہماری آواز کے گوشہ خواتین و اطفال میں ایڈیٹر ہیں۔ ہماری آواز

جواب دیں

Back to top button