تاریخ کے دریچوں سےشاہان و شہسوران اسلام

سکھ ڈوگرہ ریاست کشمیر کے خلاف مجاہدین اسلام کا کردار

خطہ کوہسار، مری و پونچھ، کشمیر کے ٹیپو سلطان
ماضی کے جھرونکوں سے گمنام مجاہدین اسلام

  • سردار شاہنواز خان عباسی
  • سیسر، دھیرکوٹ آزاد کشمیر

تحریر: اسامہ علی عباسی
مؤرخ اسلامیہ و علم الانساب

تاریخ میں یہ بات درج ملتی ہے کہ 1837ء میں ڈوگرہ مہاراجہ گلاب سنگھ نے ڈھونڈ عباسی قبیلے کے خلاف کوہستانی مہم کے نام سے ایک فوجی آپریشن شروع کیا تھا اور قریبا 12 ہزار کے قریب ڈھونڈ عباسیوں کا قتل عام اور ان کی جائیدادیں ضبط کر لی گئی تھی۔ اسکا آغاز 1831ء میں ہوا، جب سید احمد بریلوی شہید اور پیر آف پلاسی محمد علی شاہ رح کے ہمراہ ڈھونڈ عباسی مجاہدین نے معرکہ بالاکوٹ میں سکھوں کے خلاف جہاد کیا۔ قریبا 1831ء سے لیکر 1837ء تک مسلسل 6 سال تک ڈھونڈ عباسیوں اور ڈوگرہ سکھ ریاست کے مابین خانہ جنگی اور معرکوں کا سلسلہ برابر جاری رہا۔
ڈوگرہ حکمران گلاب سنگھ کی ڈھونڈ عباسیوں کے ساتھ دشمنی و جنگ جدال کئی سالوں پر محیط رہا۔ اسی وجہ سے اس خانہ جنگی کے مفصل حالات تاریخ اقوام پونچھ میں مستند مؤرخ کشمیر محمد دین فوق نے بیان کیے ہیں۔ رنجیت سنگھ کی سربراہی میں اسکے چہیتے ڈوگرہ گلاب سنگھ کے دور میں کشمیر میں جو ظلم و ستم کا بازار گرم کیا گیا، اس کے مقابلے میں پونچھ موجودہ سیسر، دھیرکوٹ سے ڈھونڈ عباسی قبیلے کے سردار شاہنواز خان عباسی میدان عمل میں آۓ جنکی سربراہی میں دیگر ڈھونڈ عباسی سرداروں نے کوہ مری و مضافات سے ڈوگروں کے خلاف اعلان بغاوت کیا اور عملا جہاد کیا۔ ڈوگروں کے خلاف عملا جدوجہد اور اسیران آزادی کا مرکز پیر حافظ سراج الدین سورج علی خان عباسی المعروف پیر ملک سورج اولیاء رح ، پوٹھہ شریف مری کی درگاہ تھا۔ سردار شاہنواز خان عباسی کا نھنیال بھی علیوٹ، پوٹھہ شریف مری میں تھا اور آپکی والدہ کا تعلق رتنال ڈھونڈ شاخ سے تھا۔ 1837ء میں بالآخر ڈوگرہ ریاست کشمیر اور سردار شاہنواز عباسی کے درمیان جنگ بندی کا معاہدہ ہوا، ذیل میں اس معاہدے کی کاپیاں اور اس پر ڈوگرہ ریاست کشمیر کے دستحظ موجود ہیں۔

برٹش میوزیم، انگلینڈ میں جہاں برصغیر پاک و ہند کے بہادروں، مجاہدین و سلاطین بالخصوص ٹیپو سلطان سمیت 16 بہادر مجاہدین کی تلواریں رکھی گئی ہیں، وہیں ڈھونڈ عباسی قبیلے کے بہادر سپوت سردار شاہنواز خان عباسی کی تلوار بھی موجود ہے۔ سردار شاہنواز خان عباسی، ڈھونڈ عباسی قبیلے کی چندال ڈھونڈ شاخ سے سردار گل حیدر خان عباسی ابن ملک قاسم خان عباسی کی اولاد میں سے تھے جو کہ گل چندر خان کے نام سے مشہور و معروف ہیں اور مری گھڑیال کیمپ کے بالمقابل انکا مزار موجود ہے۔ سردار شاہنواز خان عباسی نے دھیرکوٹ میں آپ راجی دور میں حکومت بھی کی، انکی تلوار آج بھی ڈھونڈ عباسی قبیلے کی نشانی کے طور پر برٹش میوزیم، انگلینڈ میں موجود ہے جہاں پورے برصغیر میں صرف 16 بہادر لوگوں کی تلواریں رکھی گئی ہیں جس میں ٹیپو سلطان کی تلوار بھی موجود ہے۔

مغلیہ سلطنت، ہندوستان، پنجاب اور ہندوستان کے مہاراجہ رنجیت سنگھ اور ڈوگرہ گلاب سنگھ کے ساتھ جنگ بندی کے بعد کے خطوط کی تصاویر

ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

متعلقہ مضامین و خبریں

جواب دیں

Back to top button