حضور غوث اعظممنقبت

ہو چشم عنایت ذرا غوث اعظم

مرے دل کی ہے التجا غوث اعظم
مجھے اپنا روضہ دکھا غوث اعظم

میں ہوں تیری چوکھٹ کا ادنیٰ بھکاری
مری سوئی قسمت جگا غوث اعظم

وہ محتاج ہو جائے ممکن نہیں ہے
جسے تیرا صدقہ ملا غوث اعظم

جو کہتا ہے مشکل میں یاغوث اس کو
مدد تیری ملتی ہے یا غوث اعظم

جو پہنچی تھی عورت لئے عرضی در پر
اسے تم نے بیٹا دیا غوث اعظم

جو ہے راہ عثمان و حیدر عمر کی
اسی راہ حق پر چلا غوث اعظم

دل مضطرب کو ملی ہے تسلی
کیا جب ترا تذکرہ غوث اعظم

جو مسلم پریشاں ہیں دنیا میں ان پر
ہو چشم عنایت ذرا غوث اعظم

بچائے جو مہر قیامت سے مجھ کو
عطا ہو وہ نوری ردا غوث اعظم

جو مجبور و لاچار ہیں جگ میں ان کو
ترا چاہیے آسرا غوث اعظم

شہنشاہوں سے ہے وہ اعلیٰ جہاں میں
جسے در تمہارا ملا غوث اعظم

تمنا ہے یہ جیش نوری کے دل کی
رہے بن کے منگتا ترا غوث اعظم

نتیجۂ فکر: محمد جیش خان نوری امجدی مہراجگنج یوپی

مقیم حال سعودی عرب

ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

متعلقہ مضامین و خبریں

جواب دیں

Back to top button