وقت نے یوں کروٹ بدلی

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)
(تحریر: جاوید گورکھ پوری (ایڈیٹر: گل رنگ ڈائجسٹ گورکھ پور
آج سے دو ڈھائی ماہ قبل جب ملک میں شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) پاس ہوا یقینا ملک کے مسلما نوں کے سا تھ دو رخی اپنا ئی گئی، جس کے بعد ملک گیر پیمانے پر ہزارہا رکاوٹوں کے باوجود احتجاجات ہو تے رہیں جو حا لیہ تباہ کن و با کورونا وائرس سے احتیا طی تدا بیر کے پیش نظر پورے ملک میں تاریخی۱۲/ دنوں کے لاک ڈاؤن (عوامی کرفیو) ہونے کی وجہ سے ٹھنڈے بستے میں جاتے دکھائی دے رہیں ہیں۔اسی اثنا میں جب کہ اس کالے قانون کے خلاف احتجاجات ہو رہے تھے تو بعض نوآموز قلم کاروں کے نوک قلم میں طغیانیت اور قوم مسلم کی تحفظ و بقا کے لیے دلوں میں ابھرتے جذبا ت نے کچھ اس قدر ہل چل مچائی کی ان حضرات نے قوم کے رہبر و رہنما علماے کرام و مشائخ ذوی الاحترام کے خلاف کچھ چبھتے ہوئے مضامین لکھ ڈالے مثلاً ارباب خانقاہ خاموش کیوں؟ قوم کے علما کیا کر رہیں ہیں؟ قوم کے ٹھیکے دار کہاں ہیں؟ وغیرہ وغیرہ؛ جس میں علماے کرام و مشائخ خانقاہ کی خاموشی پر سوالات اٹھائے گئے تھے کہ آخر وہ خاموشی کیوں اختیار کئے بیٹھے ہیں ارے انہیں تو نا صرف بولنا چاہیئے بلکہ سڑکوں پر اتر کر احتجاج میں بھی شامل ہونی چائیے یہ سوالات بروقت صحیح بھی تھے کہ علماے کرام اس قوم کے رہنما فقط دینی معاملات میں ہی نہیں بلکہ دنیاوی معاملات میں بھی اس قوم کے رہبر علماے کرام ہی ہیں۔ خود راقم الحروف کے دل میں بھی یہ بات پیدا ہوئی تھی کہ میں بھی نا کیوں علماے کرام و مشائخ عظام کی اس چپی پر کچھ لکھوں اور ان کی توجہ اس امر کی طرف مبذول کراؤں مگر چونکہ دیگر قلم کار حضرات نے یہ کام انجام دے ہی دیا تھا لہذا اس کے اعادہ کی ضرورت محسوس نہیں کی اور بعض حضرات نے اس قدر سختی کے ساتھ جو خامہ فرسائی کی تھی کہ ا ن کے مضامیں سے بے ادبی کے عنصر نمایاں ہو رہے تھے باوجودیکہ علماے کرام و مشائخ عظام اگر ہمہ وقت ہمارے لیے فکر مند نہ رہتے ہوں مگر اکثر اوقات انہیں قوم وملت کی ہی فکر کھائے جاتی ہے۔ ہو سکتا ہے کہ اس خاموشی کے پیچھے کوئی راز ہو جس سے ہم بے خبر ہوں بس یہی سب سونچ کر قلم نہ اٹھا سکا۔ اور پھر کچھ دنوں بعد وقت نے کچھ یوں کروٹ بدلی کہ وہیں قلم کار جو علماء ومشائخ کی بال کی کھال نکالنے کوتیار تھے انہیں صاحب قلم وقرطاس کو علما و مشائخ سے دعاؤں کی التجائیں کرتے دیکھا گیا کہ حضرت دعا فرمائیں! اللہ تعالی ہمیں اس بلا (کرو نا وائرس) سے نجات بخشے اور ان علماے کرام و مشائخ عظام کی محبت بھی ملاحظہ کریں کہ انہوں نے ملک و ملت کے حق میں اپنے ہاتھوں کو بارگاہ ایزدی میں بلند بھی کیا۔
الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

About ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

Check Also

لاک ڈاؤن، مدارس اسلامیہ اور ہماری ذمہ داریاں

تحریر: محمد نعیم الدین برکاتی فیضی کرونا کے تیزی سے ہوئے خطرات اور اس کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔