نعت : شاخ درشاخ عنادل کا چہکنا دیکھو

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

رشحات قلم : رحیم الدین خان گوہر مصباحی

آؤ گلزار مدینہ کا مہکنا دیکھو
عشق سرکار میں کلیوں کا چٹکنا دیکھو

بارشِ آب کے دیکھے ہیں نظارے تم نے
آؤ رحمت کا یہاں مینہ برسنا دیکھو

بادۂ کیف میں سرمست و مؤدب بیٹھے
شاخ در شاخ عنادل کا چہکنا دیکھو

فرط الفت میں ہمہ وقت وہ گِردِ روضہ
آؤ قدسی کا یہاں ہالہ بنانا دیکھو

خاک پائے شہ والا کو بطور سندور
مانگ میں شوق سے خورشید کا بھرنا دیکھو

ناتوانی بھی یہاں رشکِ توانائی ہے
در جاناں پہ ضعیفوں کا سنبھلنا دیکھو

عرض اتنی کہ اجل آئے تو آئے لیکن
پہلے سرکار کہیں، مجھ سے مدینہ دیکھو

کشتۂ عشق کی ہو پوری یہ حسرت جانا!!
در پہ بلوا کے لہو دل کا ٹپکنا دیکھو

مر نہ جائے کہیں یوں تجھ سے بچھڑ کر گوہر
ہجر کے دام میں اب اس کا تڑپنا دیکھو

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

About ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

Check Also

نعت : کتنا شیریں نبی کا لہجہ ہے

از : عبدالمبین حاتم فیضی چشمِ افلاک کا وہ تارا ہےجو مرے مصطفیٰ کا روضہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔