جہان حضور شعیب الاولیاء

سرکار شعیب الاولیاء علیہ الرحمہ کے مختصر حالات زندگی

سرکار شعیب الاولیاء حضرت شاہ محمد یار علی صاحب علوی علیہ الرحمة عوام و خواص اہلسنت میں مشہور و مقبول ایک معروف ولی گزرے ہیں
جو امام اہلسنت مجدد دین و ملت اعلیحضرت محدث بریلوی علیہ الرحمة کے نہایت شیداٸی اور ان کے مسلک و مشرب پر نہایت سختی سے گامزن تھے

آپ تقوی و طہارت میں یگانہ روزگار رہے ہیں
نمازوں سے اس قدر محبت تھی کہ جماعت تو جماعت آپ نے 48 سال تک امام کی تکبیر اولی بھی فوت نہ فرماٸی
بے شمار افراد آپ کے پاس اپنے روحانی و جسمانی علاج کیلٸے تشریف لایا کرتے تھے
اور آپ صرف ان حضرات پر دم کر دیا کرتے تھے
آپ کے بارے میں بیان کیا جاتا ہے کہ اپنی پوری زندگی میں کبھی آپ نے کسی کو ایک تعویز تک نہ دیا
بلکہ صرف دم کر کے اور دعا فرما کر علاج فرما دیا کرتے تھے
حضرت مولانا جمال احمد رضوی صاحب قبلہ نے بتایا کہ ایک صاحب آپ کے پاس حاضر ہوٸے اور عرض کیا کہ حضور میرے گھر میں ایک جن بہت پریشان کرتا ہے
کبھی گھر کا کوٸی سامان خود بخود جل جاتا ہے
کبھی کسی دیگر طریقے سے پریشان کرتا رہتا ہے
آپ اسے دور فرما دیں تاکہ ہم لوگ اطمینان و سکون سے رہ سکیں
حضور شعیب الاولیاء اس کے مکان میں تشریف لے گٸے
اور ادھر ادھر دیکھنے کے بعد فرمایا کہ کہاں ہے ؟ کدھر ہے ؟ یہاں تو کوٸی جن و آسیب نہیں ہے نظر ہی نہیں آرہا ہے
اور پھر اس گھر میں دوبارہ کوٸی تکلیف نہیں ہوٸی
یہ تھی ان کے مبارک قدموں کی برکت
حضور سرکار شعیب الاولیاء علیہ الرحمة نے ایک دن خواب میں ملاحظہ فرمایا کہ ان کی خانقاہ میں درس نظامی کا درس دیا جا رہا ہے
صبح بیدار ہوتے ہی علماء کرام کا تقرر فرما کر اپنی خانقاہ میں ہی دارالعلوم فیض الرسول کو جاری و ساری فرما دیا
یہ دارالعلوم آج بھی پورے ہندوستان میں ایک مثالی درسگاہ کی حیثیت کا درجہ رکھتا ہے
اس دارالعلوم فیض الرسول میں بے شمار نامی گرامی ان علماء اہلسنت نے تدریس کی خدمتیں انجام دی ہیں جو اپنے دور کی نابغہ روزگار شخصیتیں تھیں
جن کے علم کا ڈنکا چار دانگ عالم میں بجتا ہے
آج بھی جن کی شاگردی پر ایک زمانے کو ناز و فخر ہے

جہاں تعلیم کے ساتھ ساتھ تربیت پر بھی خصوصی توجہ دی جاتی ہے

آپ کا مزار مبارک آپ کی خانقاہ و دارالعلوم سے متصل آج بھی مرجع خاص و عام ہے
جہاں آج بھی روحانیت کے پیاسے حاضر ہو کر اپنی روحانی تشنگی دور کرتے ہیں
یہ فقیر و حقیر بھی آپ کے مبارک روضہ پر حاضر ہو کر اپنا مدعا عرض کر چکا ہے
سرکار کے مبارک در پر حاضر ہو کر دل میں واقعی اطمینان و سکون کی کیفیت محسوس کر رہا ہوں
سرکار نے اپنے لطف خاص سے نوازا
ہر سال محرم الحرام کی 22 تاریخ کو شاندار طریقے سے آپ کا عرس پاک پورے شرعی حدود و قیود کے ساتھ منایا جاتا ہے
اور
اسی میں دارالعلوم فیض الرسول کا سالانہ جلسہ بھی منعقد کیا جاتا ہے
روحانیت کے پیاسے اور متلاشی آپ کی بارگاہ پرانوار میں حاضر ہو کر اپنی روحانی غذا حاصل کر سکتے ہیں

ازقلم: (مولانا) محمودالحسن قادری رضوی چشتی سہروردی
7588792786 مالیگاٶں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے