سنگیت سوم جیسے نفرت انگیز لوگوں پر لگام کب لگے گی ؟

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

ازقلم: محمد احمد حسن سعدی امجدی
البرکات علی گڑھ

حالیہ دنوں میرٹھ کے بی جے پی ممبر اسمبلی سنگیت سوم کا ایک اشتعال انگیز بیان سامنے آیا ، جس میں انھوں نے یوپی کی تمام مسجدوں کو توڑ کر اس جگہ مندر بنانے کی بات کہی، مزید اس بات کی بھی وضاحت کی جا رہی ہے کہ سنگیت سوم 2013 کے مظفر نگر فرقہ وارانہ فسادات میں کلیدی مجرموں میں سے ایک ہے اور اس نے ایک بار پھر پریس کانفرنس کے ذریعہ فرقہ وارانہ فسادات کو ہوا دینے کی ناپاک کوشش کی، ابھی گزشتہ مہینہ 8 اگست 2021 کو ایسی ہی ایک اور اشتعال انگیز خبر سامنے آئی، جس میں دہلی کے جنتر منتر پر مسلمانوں کے خلاف نعرے بازیاں کی گئیں اور مسلمانوں کو کھلے لفظوں میں کاٹنے کی بات کی گئی، افسوس ہے کہ مسلم اقلیتوں کے خلاف اس طرح زہر افشائی کی جا رہی ہے، لیکن مرکزی اور صوبائی حکومت ان معاملات پر خاموشی سے کام لے رہے ہیں، وطن عزیز ہندوستان کی جمہوریت سے محبت کرنے والا ہر شہری مرکزی حکومت سے یہ سوال کر رہا ہے کہ سنگیت سوم جیسے نفرت انگیز لوگ آخر کب تک ملک میں فرقہ وارانہ فسادات کو ہوا دیتے رہیں گے ؟ آخر کب تک ایسی ناپاک ذہنیت کے لوگ سرے عام زہر اگلتے رہیں گے؟ کب تک وطن عزیز کی جمہوریت یونہی پامال ہوتی رہے گی؟ حکومت کو چاہیے کہ ایسے لوگوں کے خلاف جلد سخت اقدام کرے ورنہ ملک کے امن و امان کو شدید خطرہ لاحق ہو سکتا ہے۔

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

About ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

Check Also

سوائے مسلمان

ازقلم: مدثر احمد، شیموگہ کرناٹک 9986437327 کرناٹکا حکومت کی جانب سے تشکیل شدہ نصابی ترمیمی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔