نظم

عظمتِ قرآں

رب کی رحمت سے دولت قرآں
ہم کو حاصل ہے برکتِ قرآں

اے خدا تیری بندگی کی ہے
ہم نے کرکے زیارتِ قرآں

کاش کے ہم سبھی سمجھ جائیں
عظمت و شان و شوکتِ قرآں

ہوتی کیا آساں زندگی اپنی
مانتے جو نصیحتِ قرآں

ہم نہ کر پائے قدر مولا معاف
ہاتھ تو آئی نعمتِ قرآں

یہ ہے محفوظ اپنے سینوں میں
مٹ نہیں سکتی صورتِ قرآں

یہ ہے اللہ کا کلامِ مبیں
جان لو اس سے عظمتِ قرآں

اس میں آدابِ زندگی بھی ہیں
یہ بھی تو ہے فضیلتِ قرآں

اس کو کونین میں ملی عظمت
جس نے پالی ہدایتِ قرآں

ساری دنیا کے علم سے نہ بنی
ایک بھی یارو آیتِ قرآں

ازقلم: ذکی طارق بارہ بنکوی
سعادت گنج،بارہ بنکی،یوپی

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے