نظم

نظم: مسجد کو آباد کر

نتیجۂ فکر: شیخ عسکریؔ رضوی بنارسی
کرکے گڑھوا جھارکھنڈ

جب تُجھے اللہ نے۔۔۔۔۔ دنیا میں پیدا ہے کیا
کر لے اس کی بندگی اور شان سے واپس تو جا

کامیابی دونوں عالم میں تجھے گر چاہئے
اے خدا کے بندے کر آباد مسجد کو سدا

آئے جب آذان کی آواز تیرے کان میں
بند کر تو اپنا کاروبار اور مسجد کو جا

عاجزی کے ساتھ اُس سے مانگ کر تو دیکھ لے
بالیقیں دے گا خدا سب طفیل مصطفیٰ

گر رضاۓ خالقِ ارض و سما مطلوب ہے
ہر گھڑی پڑھتے رہو تم نغمہ ء صل علیٰ

کام مسجد کا ہمیشہ کر رہے ہو تم سبھی
رب تعالیٰ حشر میں دے گا تمہیں بہتر صلہ

خلد میں جانا اگر ہے شان سے اے عسکریؔ
رب تعالی کی عبادت کرنے تو مسجد کو جا

ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

متعلقہ مضامین و خبریں

جواب دیں

Back to top button