متفرقات

رام گڑھ: مسجد عائشہ کا سنگ بنیاد رکھا گیا، علماء میدان میں اتر کر کام کریں: حبیب عالم رضوی

21/مارچ 2021ء بروز اتوار، صبح نو بجے، اماٹانڈ،ہیہل ،چینگڈا، رام گڑھ میں مسجد عائشہ کے سنگ بنیاد کے موقع پر عظمت مصطفیٰ کانفرنس منعقد ہوا،جس میں ملک ہندوستان کے مشاہیر علمائے کرام و پیران عظام اور شعرائے اسلام کی تشریف آوری ہوئی.
محفل کا آغاز تلاوت قرآن مجید سے جناب قاری مظھر حسین صاحب خطیب و امام مسجد عائشہ نے کیا.
اس کے بعد نقابت کے فرائض یکے بعد دیگرے قاری مشتاق محشر اور حافظ نسیم صاحبان نے انجام دیے.
پہلی تقریر حضرت مولانا ابوہریرہ رضوی مصباحی کی ہوئی. اس کے بعد مولانا اکرم صاحب نے خطاب فرمایا. پھر مولانا کلیم الدین رضوی مصباحی عوام سے مخاطب ہوئے اور کہا کہ اللہ کے گھر کے لیے دینے سے گھٹتا نہیں بلکہ بڑھتا ہے.
اس کے بعد یکے بعد دیگرے جناب اعجاز عرشی، مظھر فیضی، قاری امتیاز عنبر اور زم زم فتح پوری نے نعتیہ کلام سے سامعین کو محظوظ کیا.
آخری تقریر حبیب العلماء حضرت علامہ الحاج حبیب عالم رضوی(صدر :ضلع ادارہ شرعیہ رام گڑھ) کی ہوئی. حضرت نے اپنے تقریر میں عوام و علما کو میدان میں اتر کر کام کرنے کی نصیحت کی، حضرت کی اصلاحی تقریر ہوئی.
مسجد کے سنگ بنیاد کے موقع پر منعقد تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہاکہ خوش نصیب ہوتے ہیں وہ لوگ جو مسجدوں کو آباد کرنے میں تعاون کرتے ہیں، انھوں نے کہاکہ اللہ کے گھر کو تعمیر کرنے والوں اور اس کو آباد کرنے والوں کا دونوں جہان میں بڑا عظیم مرتبہ ہوتاہے ۔حضرت نے اپنے خطاب کے دوران مسجد کے کاموں میں بھرپور تعاون کی اپیل کرتے ہوئے کہاکہ مسجد اللہ کا گھر ہوتی ہے اور جو لوگ اللہ کا گھر تعمیر کرتے ہیں اللہ تعالیٰ انھیں اس کا بہترین بدلہ دیتا ہے. انھوں ذمہ داران جلسہ اور اہل بستی کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہاکہ خوش قسمت ہیں وہ لوگ جن کی بستیوں میں مسجد کی تعمیر ہوتی ہے .
حبیب العلما نے تمام لوگوں سے مسجد کی تعمیر میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینی کی اپیل کی۔ آخر میں مسجد کے تعمیری کاموں میں بڑھ چڑھ کی حصہ لینے کی اپیل اور حاضرین کے سامنے مسجد کاتخمینہ بجٹ پیش کیا.
ساتھ ہی حضرت نے مسجد عائشہ کے لیے ایک خطیر رقم چندہ کی.
مسجد عائشہ کا سنگ بنیاد پیر طریقت حضرت علامہ سید علقمہ شبلی اور حضرت ڈاکٹر مجیب الرحمن صاحبان ودیگر علمائے کرام نے رکھا.
اس موقع پر حضرت مولانا انور حسین قادری ،مفتی عبدالقدوس مصباحی، مفتی فہیم الدین مصباحی، مولانا اقبال احمد مصباحی،قاری عطاء المصطفی، قاری منور سیفی وغیرہ بھی موجود تھے.
منتظمین جلسہ حضرت مولانا صدیق القادری ابوالعلائی،حافظ مظہرحسین،حافظ اقبال، قاری حمزہ صدیقی وغیرہ تھے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے