غزل

غزل: یہی میرا وطن ھندوستان ہے

نتیجۂ فکر: ناطق مصباحی

حضرت ھندکی ایمانی زمیں
حضرت شیث کی عرفانی زمیں
خواجہ ھندکی روحانی زمیں
یہی تو رہبروں کاآشیاں ہے
یہی میرا وطن ھندوستان ہے

گلاب ونسترن کی اچھی خوشبو
چمیلی یاسمن کی بھنی خوشبو
مشام جاں میں ہے چمپاکی خوشبو
معطر ہی معطر گلستاں ہے
یہی میرا وطن ھندوستان ہے

اخوت آج دنیا میں ہے قائم
محبت آج دنیا میں ہے قائم
مروت آج دنیا میں ہے قائم
ہمارے بزرگوں کا آستاں ہے
یہی میرا وطن ہندوساں ہے

ہر طرف سبزوشاداب یں کھیتیاں
ہر طرف ابررحمت ہےجلوہ کناں
ہرطرف نورونکہت کاہے کہکشاں
یہاں پر روزوشب بہتر سماں ہے
یہی میرا وطن ہندوساں ہے

پہاڑوں کے جھرنوں سے پانی رواں
ہے گنگا جمن سے بھی نہریں رواں
ہےجنگل کی خوشبو سے شادابیاں
یہی ناطق تمھارا بوستاں ہے
یہی میرا وطن ہندوساں ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے