قومی گیت: پھر دیش کو سرسبز بنا کیوں نہیں دیتے

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

نتیجہ فکر: محمد زاہد رضا بنارسی

پھر دیش کو سرسبز بنا کیوں نہیں دیتے
تم اس کو لہو میرا پلا کیوں نہیں دیتے

یہ اپنا وطن اپنا وطن اپنا وطن ہے
جاں اس کے لیے اپنی لٹا کیوں نہیں دیتے

شک جن کو ہے بھارت کے حسیں ہونے پر ان کو
تم وادیء کشمیر دکھا کیوں نہیں دیتے

بھارت سے محبت میرے ایماں کاہے حصہ
یہ بات زمانے کو بتا کیوں نہیں دیتے

جو آ نکھ دکھاتا ہے مرے پیارے وطن کو
اس شخص کی ہستی کو مٹا کیوں نہیں دیتے

یہ دیش ہماراہے ہمارا ہے ہمارا
جان اس کی تحفظ میں لٹاکیوں نہیں دیتے

نفرت کی ہے آلودگی جن سینوں میں ” زاہد”
ایک پیڑ محبت کا لگا کیوں نہیں دیتے

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

About ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

Check Also

قومی گیت: مرے پیارے اے وطن

نتیجہ فکر: ذکی طارق بارہ بنکویسعادت گنج،بارہ بنکی،یوپی مرے پیارے اے وطن مرے پیارے اے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔