متفرقات

اخلاقیات باقی ہیں تو تینوں قوانین واپس لیجیے : کانگریس

ہماری آواز دہلی
نئی دہلی، 22 ستمبر (پریس ریلیز) کانگریس نے کہا ہے کہ وزیراعظم نریندر مودی کسانوں کے ساتھ انصاف کرنے کے ساتھ ہی اب ایجنٹوں کو اذیت دینے پر اتر آئے ہیں اور ان کی حکومت نے پنجاب کے بعد اب ہریانہ کے ایجنٹوں کو بھی انکم ٹیکس نوٹس بھیج کر ڈرانا شروع کردیا ہے کانگریس مواصلات کے محکمے کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجے والا نے منگل کو کہا ’’مودی جی، انکم ٹیکس، سی بی آئی، ای ڈی کے علاوہ بھی کچھ پتہ ہے آپ کو۔ پنجاب کے بعد اب ہریانہ کے ایجنٹوں کو انکم ٹیکس کو نوٹس دیکر آپ کیا دکھانا چاہتے ہیں‘‘۔
انہوں نے کہا کہ حکومت کا کام نوٹس دینا نہیں بلکہ عوام کو انصاف دینا ہے لیکن مودی حکومت انصاف دینے کے بجائے نوٹس بھیج کر ایجنٹوں کو ڈرانے کا کام کررہی ہے۔ ان کو سمجھ لینا چاہیے کہ ایجنٹ اس طرح کے نوٹس سے ڈرنے والے نہیں ہیں۔ کسان بھی کسی دھمکی سے ڈرتا نہیں ہے لیکن مسٹر مودی کو یہ بھی سمجھنا چاہیئے کہ یہ اذیت انہیں کافی مہنگی پڑے گی۔
کانگریس ترجمان نے وزیراعظم مودی کو راست ہدف تنقید بناتے ہوئے کیا کہ ان کی قیادت والی حکومت کو اذیت دینے میں مزہ آتا ہے۔ انہوں نے لکھا کہ ’’سوٹ بوٹ والے فقیر کی آنکھیں کب کھلیں گی۔ مودی جی آپ تاریخ کے سب سے بے رحم وزیراعظم ثابت ہوئے ہیں۔ آپ کی حکومت کے ہاتھ کسانوں کے خون سے سَنے ہیں۔ ذرا بھی اخلاقیات باقی ہیں تو تینوں کالے قوانین واپس لیجئے‘‘۔
انہوں نے کہا کہ وزیراعظم اور ان کی حکومت کے وزیر ہندوستان کے غذائی تحفظ کے لئے خطرہ بن گئے ہیں۔ کسان جو تحریک چلا رہے ہیں وہ مسٹر مودی کے بنائی گئی شبیہ کا نتیجہ ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے