متفرقات

مشن بنگال: 'سوامی جی' اور 'نیتا جی' بی۔جے۔پی۔ کے انتخابی ہتھیار

ہماری آواز دہلی
نئی دہلی، 26 دسمبر (نامہ نگار) مغربی بنگال میں کچھ مہینوں بعد ہونے والے اسمبلی انتخابات کے پیش نظر دن بہ دن انتخابی حکمت عملیوں کے دوران ریاست میں بھگوا لہرپھیلانے کے لئے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) سوامی وویکانند اور نیتاجی سبھاش چندر بوس جیسے ’بنگال کے آئیکون‘ کو دہرے انتخابی ہتھیار کے طور پر استعمال کرنے کے لئے پرعزم نظرآرہی ہے۔

مغربی بنگال اور کیرالہ میں کانگریس کے ساتھ بائیں بازو کی جماعتوں کے نظریاتی تضادات کے دوران حال ہی میں ہوئے انتخابی اتحاد کے ایک دن پہلے جمعہ کو سیاسی گلیاروں میں بحث کاموضوع تھا وہیں ایک دن بعد سنیچر کو سوامی جی اور نیتاجی جیسی شخصیتوں پر بی جے پی کی غیر فطری اہمیت پر توجہ مرکوز ہوگئی۔

بی جے پی کے ذرائع کے مطابق بنگال انتخابات کے پس منظر میں پارٹی سوامی وویکانند اور نیتاجی سبھاش چندر بوس کی سالگرہ کو بڑے پیمانے پر منانے کا منصوبہ بنارہی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے