نعت رسول

نعت رسول: مجھے بھی جلوہ دکھانے حضور آئیں کبھی

مری بھی بگڑی بنانے حضور آئیں کبھی
مِرا نصیب جگانے حضور آئیں کبھی

خوشی کا مژدہ سنانے حضور آئیں کبھی
مجھے بھی جلوہ دکھانے حضور آئیں کبھی

چمن میں پھول کھلانے حضور آئیں کبھی
کہ اجڑے دل کو بسانے حضور آئیں کبھی

حسن حسين جو پیارے ہیں آپ کو آقا
انہیں کا صدقہ لٹانے حضور آئیں کبھی

خمار جس کا رہے عمر بھر نگاہوں میں
شراب عشق پلانے حضور آئیں کبھی

میں سوؤں خواب میں دیدار آپ کا ہوجائے
مجھے وہ نید سلانے حضور آئیں کبھی

ہے تیرہ قلب مرا ہر طرف اندھیرا ہے
چراغ عشق جلانے حضور آئیں کبھی

پھنسی ہے ناؤ مری جاکے بیچ دھارے میں
اسے بھی پار لگانے حضور آئیں کبھی

مدد کی ہم کو ضرورت ہے اے مرے آقا
ہماری ناؤ ترانے حضور آئیں کبھی

چہار سمت سے گھیرا ہے مجھ کو آفت نے
رہائی مجھ کو دلانے حضور آئیں کبھی

میں نعت لکھّوں پڑھوں آپ کی اے میرے حضور
مری بھی داد بڑھانے حضور آئیں کبھی

غریب و بیبس و بیکس ہوں اے مرے آقا
مرا بھی بھاگ جگانے حضور آئیں کبھی

مریضِ دید ہے شاہد علاج کیسے ہو
کہ دید اس کو کرانے حضور آئیں کبھی

نتیجہ فکر: محمد شاہد رضا رضوی

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے