Uncategorized

حکومت ایندھن پر ایکسائز ختم کرے اور 20 لاکھ کروڑ روپے کا حساب دے: کانگریس

ہماری آواز/ نئی دہلی، 24 جنوری (پریس ریلیز) کانگریس نے حکومت پر پٹرول، ڈیزل اور رسوئی گیس پر ایکسائز ڈیوٹی سے بیس لاکھ کروڑروپے کمانے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ اسے ایکسائز ڈیوٹی ختم کرکے عوام کو فوری راحت دینی چاہئے اور اس سے جو کمائی ہوئی ہے، عوام کو اس کا حساب دینا چاہئے کانگریس کے جنرل سکریٹری اجے ماکن نے اتوار کے روز یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ مودی سرکار کے اقتدار میں آنے کے بعد سے ڈیزل پر ایکسائز ڈیوٹی میں آٹھ گنا اضافہ کیا گیا ہے جبکہ پٹرول پر ایکسائز ڈیوٹی میں ڈھائی گنا اضافہ کیا گیا ہے۔ رسوئی گیس کے سلنڈروں پر دی جانے والی سبسڈی تقریبا ختم کردی گئی ہے، جس سے حکومت کو 20 لاکھ کروڑ روپے سے زیادہ کی آمدنی ہوئی ہے۔
انہوں نے کہا کہ ایکسائز ڈیوٹی لگا کر حکومت نے خطیر رقم کمائی ہے اور پٹرول- ڈیزل کی قیمت اب تک کی سب سے اونچی سطح پر پہنچا دی ہے، جبکہ عالمی منڈی میں ایندھن کی قیمتیں پہلے کے مقابلے میں نصف سے زيادہ کم ہوگئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ایکسائز ڈیوٹی کو فوری طور پر ختم کرے اور اس سے حاصل ہونے والے 20 لاکھ کروڑ روپے کا حساب ملک کے عوام کو دے۔
کانگریس کے ترجمان نے کہا کہ بین الاقوامی منڈی میں پٹرول، ڈیزل اور رسوئی گیس کی قیمتیں کم ہورہی ہیں جبکہ حکومت ان کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ کررہی ہے جس کا اثر براہ راست کسانوں، عوام، ٹرانسپورٹرس پر پڑ رہا ہے اور مہنگائی آسمان چھو رہی ہے۔

ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

متعلقہ مضامین و خبریں

جواب دیں

اسے بھی ملاحظہ کریں
Close
Back to top button