نظم

محبت کی شمع جلائیں گے ہم

از: ظفر پرواز گڑھواوی جھارکھنڈ

محبت کی شمع ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔جلائیں گے ہم
یتیموں کو دل سے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔لگائیں گے ہم

بھلے لاکھ رہ میں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ہوں دشواریاں
دیا آندھیوں میں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔جلائیں گے ہم

توں جتنا ستاءو ہمیں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ظالموں
ستم سہہ کے بھی۔۔۔۔۔۔۔ مسکرائیں گے ہم

میرے جانے کے بعد ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔سن لیجئے
بہت دیر تک یاد۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ آئیں گے ہم

یہ نفرت کے شعلوں۔۔۔۔۔۔۔۔ کو کر کے الگ
غریبوں کو دل سے ۔۔۔۔۔۔۔۔لگائیں گے ہم

مجھے لگ رہا ہے۔۔۔۔۔۔۔۔ کہ اس بزم میں
نءی اک غزل پھر۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سنائیں گے ہم

میرے مصطفیٰ۔۔۔۔۔۔۔۔ جب بلائیں ظفرؔ
میری دل کی خواہش ہے جائیں گے ہم

ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

متعلقہ مضامین و خبریں

جواب دیں

اسے بھی ملاحظہ کریں
Close
Back to top button