نظم

نظم: ملک دشمن کی رنگینیاں

نتیجۂ فکر: ناطق مصباحی

ملک دشمن کی رنگینیاں بےمثال
اسکی ہمت وبےباکیاں بےمثال

خودفریبی کے جنگل میں چلتا رہا
خودحماقت کے چنگل میں پھنستارہا

اچھے شعبوں کو نیلام اس نے کیا
قائدوں کو بھی بدنام اس نے کیا

سارےشعبوں کومقروض کرتارہا
قرض خوروں کومفرورکرتارہا

وہ تو انجان ھےوہ تو نادان ھے
غورسےدیکھئےوہ تو بےجان ھے

ملک دشمن کی سب سازشیں بےنقاب
فتنہ پرور کی سب کاشیں بےنقاب

دیس دشمن کی سب خصلتیں بےنقاب
جھوٹے بزدل کی سب خصلتیں بےنقاب

صرف مسلم نہیں سب غریبوں کی ہے
ہرطرف بھکمری سب شریفوں کی ہے

اب تو ناطق اٹھو تم ہی ذیشان ہو
ملک کی عظمتوں کے نگہدار ہو

ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

متعلقہ مضامین و خبریں

جواب دیں

Back to top button