ربیع الاولنبی کریمﷺ

عیدِ میلادالنبیﷺ: دیوبند کے حکیم الامت کی نظر میں

تحریر: جمال احمد صدیقی اشرفی القادری
دارالعلوم مخدوم سمنانی شل پھاٹا ممبرا

حکیم الامت دیوبند مولانا اشرف علی تھانوی صاحب میلادالنبی ﷺ کو عیدِ میلادالنبی لکھتے ہیں اور لکھتے ہیں کہ ہم اسے باعثِ برکت سمجھتے ہیں ۔ اور جس مکان میں عیدِ میلاد منائی جائے اس میں برکت ہوتی ہے ۔ ( حوالہ ۔ ارشاد العباد فی عیدِ میلاد صفحہ 4 )
حکیم الامت دیوبند مولانا اشرف علی تھانوی کہتے ہیں ۔ حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا وجود سب سے بڑی نعمت ہے یومِ ولادت پیر اور تاریخ ولادت بارہ ربیع الاول باعثِ برکت ہیں اس دن یومِ میلاد سے برکتیں حاصل ہوتی ہیں ۔ ( ارشاد العباد فی عیدِ میلاد صفحہ 5 )

حکیم الامت دیوبند جناب اشرف علی تھانوی صاحب کہتے ہیں ۔ حضور صلی اللہ تعالی علیہ وآلہ وسلم کا وجود سب سے بڑی نعمت ہے اور تمام نعمتیں آپ صلی اللہ تعالی علیہ وآلہ وسلم کے صدقے ملی ہیں ۔ آپ صلی اللہ تعالی علیہ وآلہ وسلم اصل ہیں تمام نعمتوں کی ۔
( ارشاد العباد فی عیدِ میلاد صفحہ 5 – 6 )

حکیم الامت دیوبند لکھتے ہیں ۔ ذکرِ ولادتِ مصطفیٰ ﷺ دیگر اذکار خیر کی طرح ثواب اور افضل ہے ۔
( امدادالفتاوی جلد نمبر 11 صفحہ 351 مطبوعہ انڈیا )

مکتبۂ فکر دیوبند کے دوستو آؤ منکرات کے خلاف مل کر کام کریں ۔ آواز اٹھائیں ۔ مگر خدارا ہماری نہ مانو تو اپنے حکیم الامت صاحب کی مان لو اور میلادالنبی جیسے ثواب کے کام کا مذاق مت اڑاؤ ۔ پڑھو تھانوی صاحب کیا لکھ رہے ہیں ۔ اب آپ کی مرضی ہے اس ثواب کے کام کا مذاق اڑاؤ یا مناکر ثواب کماؤ ۔

حکیم الامت دیوبند تھانوی صاحب فرماتے ہیں ۔ میلادالنبی صلی اللہ تعالی علیہ وآلہ وسلم مستحب عمل ہے ۔ اس میں شامل منکرات کو ترک کرنا چاہیے نہ کہ مستحب عمل کو ۔
( مجالس حکیم الامت صفحہ 160 مطبوعہ دارالاشاعت اردو بازار کراچی )

جماعت دیوبند کے حکیم الامت تھانوی صاحب میلادالنبی ﷺ کو مستحب عمل قرار دے رہے ہیں ۔ ذرا بتائیے مستحب عمل کرنے پر ثواب ملتا ہے یاگناہ ؟
ہم اہلسنت والجماعت کےلوگ بھی مستحب سمجھ کر ہی میلادالنبی مناتے ہیں فرض یا واجب نہیں ۔
رہی بات منکرات کی تو ہم سخت مخالف ہیں اور رد کرتے ہیں ان غیر شرعی افعال کا جو کچھ جہلا شامل کرلیتے ہیں ۔ آئیے منکرات کا رد کریں مستحب عمل میلادالنبی صلی اللہ تعالی علیہ وآلہ وسلم کو دھوم دھام سے منائیں ۔

حکیم الامت صاحب فرماتے ہیں ۔ میلاد ہرجگہ تو بدعت ہے مگر کالج میں منانا صرف جائز ہی نہیں بلکہ واجب ہے ۔ ( ملفوظات حکیم الامت انفاسِ عیسیٰ جلد 21 حصہ اول صفحہ 326 )
اب ایک سوال کھڑا ہوگیا کہ میلادالنبی ہرجگہ بدعت کیوں ہے ؟
اور کالج میں جائز بلکہ واجب کیوں ہے ؟
برائے کرم قرآن وحدیث کی روشنی میں اس تضاد بیانی کا جواب دیا جائے اوٹ پٹانگ باتوں سے پرہیز فرمائیں موضوع کے مطابق جواب عنایت فرمائیں ۔

ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

متعلقہ مضامین و خبریں

جواب دیں

Back to top button