تضمین بر: دکھا دے یا الٰہی وہ مدینہ کیسی بستی ھے

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

دکھا دے یا الہی وہ مدینہ کیسی بستی ھے
جہاں پر رات دن مولی تیری رحمت برستی ھے

اصل کلام

نتیجۂ فکر(تضمین): صوفی عبد العزیز یارعلوی گونڈوی

کرم کر دے الہی دیکھوں جو طیبہ کی بستی ھے
نگاہ عاصی جس کی دید کو مولی ترستی ھے

مدینے والے کے دربار کا دیدار ہو جائے
فرشتوں کی جماعت جس جگہ صلوات پڑھتی ھے

مدینے کی ہوا سے سرد کر دے دل جگر میرا
تیرے محبوب کے کوچے میں جو ہر دم مچلتی ھے

زھے قسمت مدینہ دیکھ لوں مولی تمنا ھے
جہاں کی روشنی سے تیرگی عالم کی چھٹتی ھے

کرم اک بار کر مولی مدینہ دیکھ لوں میں بھی
جہاں ہم جیسے غم کے ماروں کی قسمت سنورتی ھے

مدینہ جو شفا خانہ ھے مولی مجھ کو بھی پہونچا
میں ہوں بیمار کہ ہجر نبی میں عمر کٹتی ھے

عزیز یارعلوی کو تو ان کے پیر کا صدقہ
معطر کر مدینے کی فضا سے جو مہکتی ھے

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

About ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

Check Also

یوم خواتین پر کچھ اشعار

ازقلم: سرفراز بزمی ہے موت زمانے کے لئے مرگ امومتاس راز سے واقف نہیں افرنگ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔