نظم

کرم ہے رب کا نہایت زکوٰۃ دیتے رہو

کرو سماج کی خدمت زکوٰۃ دیتے رہو
ہے یہ اصول جماعت زکوٰۃ دیتے رہو

تمھیں غریب نوازیں گے سب دعاؤں سے
بڑھے گا نفع تجارت زکوٰة دیتے رہو

کتاب رب میں ملا حکم رب کا کتنی بار
ملےگی گھر میں بھی برکت زکوٰۃ دیتے رہو

جو مستحق ہیں انھیں ڈھونڈو اور مدد بھی کرو
گھٹے گی ملک سے غربت زکوٰة دیتے رہو

خدا نے ذکر کیا اس کا بھی نماز کے ساتھ
ہے ظاہر اس سے فضیلت زکوٰة دیتے رہو

مہ صیام میں نیکی میں ضرب ہوتا ہے
ہے وقت کتنا غنیمت زکوٰۃ دیتے رہو

نکالنا ہے تمھیں” عینی "ڈھائی فیصد بس
کرم ہے رب کا نہایت زکوٰۃ دیتے رہو

از: سید خادم رسول عینی

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے