نظم: خود کی خاطر نہیں،آقا کی شریعت کے لیے

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

نتیجۂ فکر: محمد شعیب اختر قادری

جب قلم اٹھے شہاآپ کی مدحت کے لیے
ساتھ اشعار ہوں کچھ آپ کی حرمت کے لیے

دیکھ “مَن سَبَّا نَبِیَّاً” سے اے گستاخ نبی
“فَاقتُلُو” ہے وہیں بس تیری مرمت کے لیے

قوم مسلم کو ضرورت ہے عطا کر دے ،خدا
کوئی فاروق سا پھر آۓ قیادت کے لیے

خانقاہوں سے نکلنا ہی پڑے گا صاحب
خودکی خاطر نہیں، آقا کی شریعت کے لیے

سارے عشاق شہنشاہ مدینہ کی سدا
"جان قربان ہے ناموسِ رسالت کے لیے”

ان کے گستاخ کا سر تن سے جدا ہو فوراً
خود یہ فرمان ہے سرکار کا امت کے لیے

نار دوزخ میں تو جاۓ گا ہی گستاخ مگر
کوئی انجام ہو دنیا میں شرارت کے لیے

ان کی ناموس پہ پہرہ جو نہیں دے سکتے
کون سا منھ وہ لیے آۓ ہیں جنت کے لیے؟

نعت لکھنا بھی عبث جائے گا تیرا شاعر
کچھ نہ لکھ پایا جو سرکار کی حرمت کے لیے

ان کی ناموس سے کیا بڑھ کے ہے یہ جان تری؟
دونوں عالم ہے فقط جن کی ضیافت کے لیے

ان کے گستاخ سےبدلہ نہ لیاگر اختر
شرم کی بات ہے یہ شاہ کی امت کے لیے

الدال علیٰ خیر کفاعلہ (شیئر کریں)

About ہماری آواز

ہماری آواز ایک غیر جانب دار نیوز ویب سائٹ ہے جس پر آپ سچی خبروں کے ساتھ ساتھ مذہبی، ملی،قومی، سیاسی، سماجی، ادبی، فکری و اصلاحی مضامین اور شعر وشاعری پڑھ سکتے ہیں۔ یہی نہیں آپ خود بھی ہمیں اپنے پاس پڑوس کی خبریں اور مضامین وغیرہ بھیج سکتے ہیں۔

Check Also

ماں کی شان

اہلِ مغرب کی روایتوں میں ایک دن ماں کے نام مخصوص ہے ، یعنی حیات …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔