رمضان المبارک نظم

نظم: رحمتوں کا مہینہ

نتیجۂ فکر: ظفر پرواز گڑھواوی جھارکھنڈ

رحمتوں کا مہینہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تو رمضان ہے
جس میں نازل ہوا۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پورا قرآن ہے

دل فدا جو کرے میرے۔۔۔۔۔۔۔۔ سرکار پر
داخلہ اسکا جنت میں۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ آسان ہے

فکر عقبیٰ کی کر اے۔۔۔۔۔ میرے دوستو
چند دن کیلیے ہی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تو مہمان ہے

ماں کے قدموں کے نیچے ہے خلد بریں
میرے شاہ دوعالم۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کا فرمان ہے

بد عقیدوں سے دامن۔۔۔۔ بچاءے رکھو
غوث خواجہ رضا کا۔۔۔۔۔۔ یہ اعلان ہے

کاش میں دیکھ لوں۔۔۔۔ تربت مصطفے
کب سے دل میں ہمارا۔۔۔۔۔۔ یہ ارمان ہے

سب فدا ہیں میرے۔۔۔۔ مصطفی پر ظفر
چین ہو روس ہو یا کہ ۔۔۔۔۔۔۔جاپان ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے