حضور خطیب البراہین

حضور خطیب البراہین علم و عمل کے حسین سنگم تھے

حضور خطیب البراہین کا ظاہر وباطن ایک طرح تھا ظاہر میں دیکھ کر متاثر ہونے والا آدمی جب قریب ہوتاتھا اور آپ کے خلوتوں کو دیکھتا تھا تو اور قریب سے قریب تر ہوجاتا تھا آپ علم وعمل کے حسین سنگم تھے علم دین کے فروغ کے لیے آپ نے اپنے پوری زندگی وقف کردی […]

حضور خطیب البراہین

حضور خطیب البراہین الشاہ صوفی نظام الدین علیہ الرحمۃ و الرضوان

نحمدک یا اللّٰہ الصلاۃ والسلام علیٰ یا رسول اللہ اما بعدفاعوذ باللہ من الشیطٰن الرجیمبسم اللّٰہ الرحمٰن الرحیمفَاذْكُرُوْنِیْۤ اَذْكُرْكُمْاللّٰہ رب العزت فرماتا ہے” تم میری یاد کرو میں تمہارا چرچا کروں گا”الی موضع آخر: قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلممن لم یشکر الناس لم یشکر اللّٰہاللّٰہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم فرماتے ہیں” […]

حضور خطیب البراہین منقبت

منقبت در شان حضور خطیب البراہین

خلیفہ حضور احسن العلماء و حضور رئیس الاتقیا محی السنہ تاج الاصفیا خطیب البراہین حضرت علامہ مولانا مفتی صوفی محمد نظام الدین قادری برکاتی رضوی رحمۃ اللہ علیہ ازقلم: محمد شاہد رضا رضوی رضائے حضرت احمد رضا صوفی نظام الدینجہانِ علم و حکمت کی ضیا صوفی نظام الدین کبھی ہونا نہیں مجھ سے جدا صوفی […]

حضور خطیب البراہین

حضور خطیب البراہین سنت رسول کے عالم اور عامل تھے

ازقلم: محمد غیاث الدین خان نوریچیرمین مینارٹی ویلفیر ٹرسٹپرنسپل جامعۃ الصالحات گرلس کالج مغلہاں بھگیرتھپور مہراجگنج محی السنہ حضور خطیب البراہین حضرات علامہ الحاج الشاہ صوفی مفتی محمد نظام الدین رضوی عالم باعمل تھے آپکی زندگی میں سنت مصطفی کا پہلو نمایاں تھا سنت رسول کے اس قدر عالم تھے کی وہ انکی عادت بن […]

حضور خطیب البراہین

حضور خطیب البراہین کا تقوی

پیش کش احمد ضیا علیمی مولانا ادریس بستوی صاحب قبلہ تحریر فرماتے ہیں مجھ سے جناب ماسٹر سجاد حسین صاحب مہنداول نے بیان کیا کہ ایک بار میں اپنے رشتے دار بھونو بھائی کی دوکان پر بکھرا گیا تھا صوفی صاحب قبلہ علیہ الرحمہ اور چند دوسرے علما بھونو بھائی کی سِلائی کی دوکان پر […]

حضور خطیب البراہین

سیدی مرشدی حضور خطیب البراہین

از طرف محمد تصور رضا نظامیمتعلم : دارالعلوم حسینیہ گورکھپور بحمد اللہ حضرت آدم علیہ السلام سے لیکر آج تک کبھی بھی اس روئے زمین کو اللہ تبارک و تعالی نے اپنے نیک و صالح بندوں سے خالی نہیں چھوڑاہر زمانے میں کوئی نہ کوئی اللہ کا بندہ ضرور رہا جو اپنے فیض رواں بحر […]